Home / Fashion / Mukhtaran Mai اجتماعی زیادتی سے ریمپ تک کا سفر

Mukhtaran Mai اجتماعی زیادتی سے ریمپ تک کا سفر

Mukhtaran Mai – Journey from gang rape to the ramp.

IMG_3098

کچھ لوگوں کیلئے قصہ بس اتنا تھا کہ اس سماج کے فرسودہ نظام میں ایک عورت کو پنچائیت کے غیر انسانی فیصلے کی بھینٹ چڑھا دیا گیا، جی ہاں بات ابھی کی نہیں چودہ سال قبل کی ہے، جب مقامی پنجائیت نے مختاراں مائی کے ساتھ زنا بالجبر کی اجازت دی۔

Mukhtaran Bibi Gang Rape Survivor

میڈیا میں، این جی اوز، مظاہروں میں خوب پاکستانی معاشرے کی دھجیاں اڑائیں گئیں اور مختاراں مائی کو مظلومیت کی دیوی بنا کر پیش کیا گیا، اس بات سے کجا کہ اصل حقیقیت کیا ہے، بات مکینوں سے نکل کر جب عدالت تک پہنچی تو پھروہی ہوا، دے مار ساڑھے چار۔

532189db6b706

پولیس پر زور پڑا اور ملزمان کی گرفتاری کیلئے اندھا دھند چھاپے اور گرفتاریاں عمل میں آئیں، پولیس اس بات سے انجان کے معاملے کی اصل حقیقت کیا اور کون کتنا بڑا گناہ گار ہے، بس جو ہاتھ لگا اسے حوالات کی سیر کرا دی۔

mai_jpg_555673f

مقدمہ چلتے چلتے  سالوں بیت گئے اور پھر سپریم کورٹ نے اپنا فیصلہ سنا کر ایک شخص کے سوا سب کو با عزت بری کردیا، مگر کیا کہنے ان عدالتی کارروائیوں کہ سات سال بعد جیل کی سلاخوں کے پیچھے سے نکل کر کون کتنا باعزت بری ہوتا ہے یہ میں بھی جانتی ہوں اور آپ بھی۔

Mukhtar-Mai-with-Hillary-Clinton

مختاراں مائی سمیت دیگر تمام کرتا دھرتا، نام نہاد این جی اوز اور ملکی اور بین الاقوامی میڈیا میں عدالت عظمیٰ کے فیصلے پر سخت تنقید کی گئی، مگر عقل کے اندھوں نے صورت حال کا باریک بینی سے جائزہ لینا مناسب نہ سمجھا۔

Mukhtar-Mai-with-Husband-and-his-first-wife

این جی اوز کے نام پر بکاؤ تنظیمیں اور مادر پدر آزا ملکی و غیر ملکی میڈیا نے دس سال سے زائد عرصے تک ملکی عزت کا جنازہ نکالا۔  مختاراں مائی کیس میں این جی اوز نے انتہائی شرمناک کردار ادا کیا۔

130219121758-mukhtar-mai-paris-book-horizontal-large-gallery

روز اول سے پاکستان کیلئے بدنامی اور بے عزتی کا سونامی لانے والی خاتون مغرب کی پسندیدہ شخصیت ٹھہریں، 2نومبر کو امریکی گلیمر میگزین نے مختاراں کو ”سال کی خاتون“ کا اعزاز دیا۔ 12جنوری 2006ءکو فرانس میں اس کے متعلق کتاب شائع ہوئی جس کی بے تحاشا تشہیر کی گئی اور کروڑوں ڈالر کمائے گئے۔ اس کا ترجمہ جرمن زبان میں بھی ہوا۔

594449._UY400_SS400_

پھر16جنوری 2006ءکو مختاراں پیرس پہنچ گئی جہاں اس کا استقبال فرانس کے وزیر خارجہ فلپ دوستے بلینزی نے کیا۔ 2مئی 2006ءکو مختاراں نے اقوام متحدہ کے ہیڈ کوارٹرز نیویارک میں تقریر کی۔

maxresdefault

اگلے رورز اس کا استقبال اقوام متحدہ کے انڈر سیکریٹری جنرل شاشی تھارو نے کیا اور اس کی خوب تعریف کی۔ 31اکتوبر 2006ءکو امریکہ میں اس سے متعلق ایک اور کتاب شائع ہوئی۔ مارچ 2007ءمیں کونسل آف یورپ سے اس نے 2006ءکا نارتھ ساﺅتھ پرائز”جیتا“۔

thumbprint_cam2-15_2791570b

اکتوبر 2010ءمیں کینیڈا کی ایک یونیورسٹی نے اسے ڈاکٹریٹ کی اعزازی ڈگری دیدی۔ اس سے قبل کینیڈا نے اسے شہریت دینے کا بھی اعلان کیا تھا، یعنی کوئی موقع ہاتھ سے نہ گیا جب مغربی دنیا کے میڈیا نے اسے دن رات اچھالا نہ ہو، مجبوراً پاکستان نے بھی بالاآخر 2اگست کو مختاراں مائی کو فاطمہ جناح گولڈ میڈل اور 5لاکھ روپے کا تعاون پیش کیا۔

PAKISTAN GANG RAPE VICTIM

ان سات سالوں میں ان نامزد ملزمان کا جو بنا سو بنا مگر ان سات سالوں میں مختاراں مائی نے وہ کچھ کما لیا ، جس کا وہ سوچ بھی نہ سکتی تھی، کئی کئی گاڑیاں، لمبا چوڑا گھر، دفاتر، این جی اوز، اسکول اور نوکروں کی فوج ظفر موج۔

Mukhtaran-Mai-611x328

شاید مختاراں مائی نے بچپن میں کچھ پڑھا یا سکیھا ہو یا نہ ہو، مگر اس بات کو اپنے پلو سے باندھے رکھا کہ بدنام نہ ہونگے تو کیا نام ہوگا۔۔ اور پھر اسی بدنامی کا دامن تھام کر امریکا، لندن، کینیٖڈا، یورپ اور نہ جانے کہاں کہاں کا سفر عیش و عشرت سے طے کیا۔

Mukhtar-Mai-Web-Speaker

دنیا بھر میں ملکی وقار کو جتنی زوروں سے خاک میں ملایا، اس کا پھل اتنے ہی اچھے ڈالروں کی صورت میں پایا۔ کبھی اس داستان کو  اوپرا  شو کی زینت بنایا تو کبھی غیر ملکی لائیبری کی رونق، کبھی آٹو بائیو گرافی کا موضوع بنایا گیا تو کبھی مظاہروں میں اچالا۔

5819d7a7df7cb

تاہم اب لگتا ہے کہ مختاراں مائی دنیا کو چلا چلا کر اپنے اوپر ہونے والے مبینہ زیادتی کے قصے سے تھک گئی ہے یا پھر اسے کمائی کیلئے مزید بہتر راستہ دکھا دیا گیا ہے، جبھی تو یہ آواز قلم اور ٹی وی، اخبار اور صفحات سے نکل کر ماڈلنگ کی چکا چوند کر دینے والی دنیا میں آبسی ہے۔

71f0561e-a0cd-11e6-b05c-0413422fb257_1280x720

جی ہاں پروپگنڈہ کلچر میں ایک اور قدم آگے چل کر مختاراں مائی اب نئے پیشے میں آگئی ہیں، گویا پاکستان کی ایک تنگ گلی اور محلے سے شروع ہونے والا سفر معاشرتی نظام کی ریمپ پر مظلومیت کی واک کرے گا۔
بشکریہ: سمأ

Mukhtaran Mai’s Journey from gang rape to the ramp.

About Pak Vision TV

Check Also

Tehreek Adal Insaf Kay Liye He, News Headlines, 28 December 2017, AbbTakk

Tehreek Adal Insaf Kay Liye He, News Headlines, 28 December 2017, AbbTakk, Latest News Headlines …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *